بابری مسجد کی شہادت اور مسلمانوں کی صورتحال…..

(محمد فراز احمد,نظام آباد)
6 ڈسمبر کا دن جب بھی آتا ہے مسلمانوں کے دلوں میں مدفون بابری مسجد کے سانحہ کا غم دوبارہ تازہ ہو جاتا ہےاورمسلمان سڑکوں پر اتر آتے ہیں اور ہر فرد مختلف انداز میں اپنے غم و غصہ کا اظہار کرتا ہیں. بابری مسجد کی شہادت درحقیقت مفاد پرست سیاست دانوں کے لئے اقتدار حاصل کر نے کی ایک سبیل تھی.بڑی سازش کے ساتھ بابری مسجد کو پہلے بند کیا گیا پھر منصوبہ بند انداز میں حکومت کی مدد اور مداخلت کے ساتھ شہید کر کے نہ صرف مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کیا گیا بلکہ ملک کے آئین کی دھجیاں اڑائی گئی.یہ تمام نام نہاد سیکولر کہلائے جانے والی پارٹیوں جو سیکولر ازم کا نقاب اوڑھے اقلیتوں کی پیٹھ پیچھے حملہ کرتی ہے وہی اس کے ذمہ دار ہیں.تاریخ نے یہ تمام مناظر دیکھیں ہیں اور تاریخ دانوں نے بڑے طویل انداز میں ان کے حقائق کو واضح کر دیا ہے لیکن اقتدار کی حوص میں یہ حکمران ہندو مسلم فسادات کو ہر روز ہوا دینے اور انتشار برپا کرنے کی سازشوں میں لگے ہوئے ہیں.اس ماحول میں مسلمانوں کو جو لائحہ عمل اختیارکرنا تھا وہ اس سے کوسوں دور ہیں آج محض بابری مسجد کا ایک مسئلہ نہیں ہے بلکہ ہزاروں ایسی مساجد ہیں جو ویران پڑی ہوئی ہیں یا پھر ہندؤوں نے قبضہ کر لیا ہے
لیکن مسلمان خواب غفلت سے بیدار ہو نے کا نام ہی نہیں لیتے.جو حضرات 6 ڈسمبر کو سڑکوں پر اتر آتے ہیں اپنی اپنی فیس بک اور واٹس اپ کی پروفائیل کو تبدیل کر کے سیاہ رنگ دیتے ہیں اگر وہ روزآنہ نمازوں کی پابندی کرینگے اور مسجد کو آباد کرینگے تو پھر کبھی احتجاجاً سڑکوں پر آنے کی نوبت نہیں آئیگی.موجودہ حالات میں نہ صرف ہندوستان میں بلکہ دنیا کے مختلف حصوں میں اسلام کو بدنام کرنے کی ناپاک کوشیشیں کی جا رہی ہیں یہ اسی لئے کہ ہم نے دعوت دین کے فریضہ کو انجام نہیں دیا جس کام کے لئے ہم مبعوث کئے گئے ہیں اس کام اور اس مقصد کو ہم نے بھلا دیا. ہمیں ضرورت ہیکہ ہم قرآن و سنت کی روشنی کو عام کریں اور اسلام کی صحیح تصویر دنیا کے سامنے پیش کریں. ساتھ ہی ساتھ جو ہر کمزوری کا حل ہے وہ یہ کہ اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کریں مسلکی اختلافات کو ختم کرکے باہمی تعلقات کو استوار کریں اور ہر معاملہ میں ایکجٹ ہوکر فیصلہ کریں یقیناً اللہ ہماری مد و نصرت کریگا.انشاءاللہ اور اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامیں رکھیں جس طرح اللہ نے اپنی کتاب ہدایت میں حکم دیا ہے تاکہ دنیا اور آخرت میں کامیابی حاصل ہو کیونکہ بنی اسرائیل کو بھی اللہ نے کتاب سے نوازا تھا لیکن ان کی نافرمانیوں اور ناشکری پر اللہ نے ان پر ذلت اور مسکنت طاری کردی.اور آج اہل اسلام بھی اسی دہانے پر آ پہنچی. اسی لئے ہمیں چا ہیئے کہ اللہ کی ہدایات کو اور رسولؐ کے احکامات کو مظبوطی سے تھام لیں.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.